فیس بک پیج سے منسلک ہوں

جے یو آئی ف کا انتخابی ایڈجسٹمنٹ سے انحراف ، پی پی کا بھی امیدوار دستبردار کرنے سے انکار

اسلام آباد پالیٹکس رپورٹ/ معظم رضا تبسم :فضل الرحمان کا ضمنی انتخاب کے ایڈجسٹمنٹ معاہدہ سے انحراف ،پاکستان پیپلزپارٹی نے بنوں سے اپنا امیدوار دستبردار کرانے سے انکار کردیا۔ طے شدہ فارمولا کے مطابق جمیعت علماء اسلام ڈیرہ اسماعیل خان میں پیپلز پارٹی کے امیدوار کی جبکہ بنوں کے ضمنی الیکشن میں پاکستان پیپلز پارٹی جمیت علماء اسلام کے امیدوارکی حمایت حمایت کرنا تھی۔ پاکستان پیپلز پارٹی خیبر پختونخوا کے جنرل سیکرٹری فیصل کریم کنڈی نے ڈیرہ اسماعیل خان میں ضمنی الیکشن میں جمیعت علماء اسلام کے امیدوار کی موجودگی میں بنوں میں پیپلز پارٹی کے امیدوار کی عدم دستبرداری کا اعلان کیا ہے۔ فیصل کنڈی کا کہنا ہے کہ صوبہ میں اپوزیشن جماعتوں کے درمیان ضمنی الیکشن کے سلسلہ میں ایک فارمولا طے ہوا تھا جس کی پاکستان پیپلزپارٹی پاسداری کر رہی ہے ۔ ہم نے پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے اعلان کے مطابق پشاور میں شہید ہارون بلور کی نشست پر اپنا امیدوار کھڑا نہیں کیا۔ کلاچی میں شہید اکرام خان گنڈہ پور کے فرزند کے مقابلہ میں امیدوار نہیں لائے اسی طرح باقی صوبه بھر میں جهاں جهاں ضمنی الیکشن هورها هے وهاں پاکستان مسلم لیگ (ن) اور عوامی نیشنل پارٹی سے سیٹ ایڈجسٹمنٹ هوچکی هے مگر ڈیرہ اسماعیل خان میں جمیعت علماء اسلام نے پیپلز پارٹی کے امیدوار کے مقابلے میں مولانا فضل الرحمان کے بھائی مولانا عبیدالرحمان کو ٹکٹ جاری کر کے طے شدہ اصول کی خلاف ورزی کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر جمیعت علماء اسلام نے ڈیرہ اسماعیل خان کے حلقہ سٹی ون پر پیپلزپارٹی کے امیدوار ملک فرحان افضل دھپ کے حق میں جمیعت علماء اسلام کے امیدوار مولاناعبید الرحمان کو دستبردار نہ کیا تو پھر پیپلز پارٹی بھی بنوں میں جمعیت علمائے اسلام کے راہنماء اکرم خان درانی کے بیٹے کے مقابلے میں پارٹی امیدواریاسمین صفدرکی بھرپور انتخابی مہم چلائے گی۔