فیس بک پیج سے منسلک ہوں

انتخابی دھاندلی تحقیقاتی کمیٹی :مشترکہ سربراہی اور فیصلہ سازی اختیار متوازن کرینکی تجویز

اسلام آباد پالیٹکس رپورٹ/ معظم رضا تبسم : پاکستان پیپلزپارٹی نے انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کے لئے اعلان کردہ قومی اسمبلی کی کمیٹی میں سینٹ کی نمائندگی دیکر  پارلیمانی حثیت دینے اور کمیٹی کی حکومت اپوزیشن دونوں کو مشترکہ سربراہی دینے کی تجویز دیدی۔

پیپلزپارٹی ذرائع کے مطابق پیپلزپارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری نے پارٹی کے سینئر پارلیمانی رہنماووں سے حکومت کی اعلان کردہ انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کے لئے کمیٹی میں اراکین کے نام تجویز کرنے کی ہدایت کر دی ہے۔ چئیرمین بلاول بھٹو نے کمیٹی کے لئے متعین کردہ اراکین کی تعداد سے دوگنا زیادہ نام تجویز کرنے کی ہدایت کی ہے تاہم کمیٹی کے لئے اراکین کی نامزدگی کا حتمی فیصلہ پیپلزپارٹی پارلیمنٹرین کے سربراہ آصف علی زرداری اور پی پی پی کے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری کرینگے۔

پیپلزپارٹی کے ذرائع نے بتایا ہے کہ پیپلزپارٹی کی کوشش ہے کہ حکومت کی بنائی کمیٹی میں سینٹ کی نمائندگی دیکر پارلیمانی کمیٹی کی حثیت دی جائے جبکہ حکومت اور اپوزیشن مشترکہ طور پر کمیٹی کی سربراہی کریں۔ کمیٹی کی حکومت اور اپوزیشن مشترکہ سربراہی کے طریقہ کار کا تعین کمیٹی ٹی او آرز میں تعین اتفاق رائے سے تعین کرے تاکہ کمیٹی میں اپوزیشن اور حکومت کو برابر نمائندگی دینے جو توازن قائم ہوا وہ توازن کمیٹی کے فیصلوں میں چئیرمین کے بھاری کردار کے حوالے سے بھی لایا جا سکے۔ اس حوالے سے پیپلزپارٹی کی پارلیمانی قیادت نے حکومت اورقومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو تجاویز سے آگاہ کر دیا ہے۔