فیس بک پیج سے منسلک ہوں

ن لیگ کی ہٹ دھرمی :اپوزیشن کا متفقہ امیدوار لانے کی مہم ناکام ہونیکا خدشہ

اپوزیشن کی اکثریتی جماعت مسلم لیگ ن کی پاکستان پیپلزپارٹی کے مجوزہ صدارتی امیدوار اعتزاز احسن کے نام پر اتفاق کرنے سے انکار، میاں رضا ربانی اور یوسف رضا گیلانی کے متبادل ناموں پر غورکرنے کی ن لیگی تجویز نظرانداز کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کی اعتزاز احسن کو اپوزیشن کا مشترکہ صدارتی امیدوار بنانے کی بدستور سرگرمی کا منطقی نتیجہ مثبت نکلتا دکھائی نہیں دے رہا۔ اپوزیشن سے ایک سے زیادہ امیدوار سامنے آنے کا امکان ہے۔

گذشتہ روز مری میں ہونیوالی اپوزیشن جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس میں ن لیگ کی جانب سے پیپلزپارٹی کے تجویز کردہ امیدوار اعتزاز احسن پر تحفظات برقرار رکھتے ہوئے رضا ربانی اور یوسف رضا گیلانی کے متبادل ناموں پر غور کرنے کی تجویز دی گئی تھی۔ واضح رہے کہ سینیٹ کے انتخابات میں بھی میاں نواز شریف کی جانب سے میاں رضا ربانی کے نام پیش کئے جانے پر پیپلزپارٹی پارلیمنٹرین کے سربراہ آصف علی زرداری نے تجویز قبول کرنے سے انکار کر دیا تھا۔

شہراقتدار کی غلام گردشوں میں صدارتی انتخاب میں اپوزیشن کا مشترکہ امیدوار نامزد ہونے کی مہم ناکام ہونے کی بازگشت گونج رہی ہے اور پیپلزپارٹی کے باخبر ذرائع کو بھی اس مہم کی کامیابی پر شبہات ہیں۔
موجودہ سیاسی منظر نامہ پر اپوزیشن کے صدارتی انتخابات کے لئے متفقہ امیدوار سامنے آتا دکھائی نہیں دے رہا۔ ممکنہ طور پر نتیجہ میں پیپلزپارٹی اعتزاز احسن کو امیدوار برقرار رکھنے کا رجحان رکھتی ہے جبکہ مسلم لیگ ن ، اے این پی ، نیشنل پارٹی ، ایم ایم اے اپنا الگ امیدوار میدان میں لا سکتے ہیں۔ جس کے لئے اسفند یار ولی ، فضل الرحمان ، محمود خان اچکزئی کا نام سامنے آسکتا ہے۔