فیس بک پیج سے منسلک ہوں

سانحہ ماڈل ٹاون کیس: روزانہ کی بنیاد پر سماعت کرنے کا حکم

اسلام آباد پالیٹکس رپورٹ: سپریم کورٹ نے انسداد دہشت گردی عدالت کو سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس کی سماعت روزانہ کی بنیاد پر کرنے کا حکم دے دیا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کے متاثرین کی درخواست پر سماعت کی۔ سپریم کورٹ نے کیس کی روزانہ کی بنیاد پرسماعت کرنے اور انسداد دہشت گردی عدالت کے جج کی چھٹی منسوخ کرنے کا حکم دیا۔

عدالت نے سانحہ ماڈل ٹاؤن سے متعلق ہائیکورٹ میں زیر التوا مقدمات دو ہفتےمیں نمٹانے کا حکم بھی دیا، اس کے علاوہ جسٹس باقر نجفی رپورٹ کو عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنا کرایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو شام تک رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کی۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ ماورائے قانون کوئی قدام نہیں کریں گے۔ ججز کی عزت نہ کرنے والا کسی رعایت کا مستحق نہیں۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیا نوازشریف سمیت سیاسی شخصیات کی طلبی سے متعلق کوئی حکم دہشت گردی عدالت میں موجود ہے؟ جس پر پراسکیوٹر جنرل نے ماڈل ٹاؤن کیس کے مقدمات اور استغاثہ کا ریکارڈ پیش کردیا۔

واضح رہے کہ سترہ جون سال 2014 کو لاہور کے علاقے ماڈل ٹاؤن میں سربراہ پاکستان عوامی تحریک طاہرالقادری کی رہائشگاہ کے سامنے قائم تجاوزات کے خاتمے کیلئے پولیس آپریشن کے دوران کارکنوں کی مزاحمت کے دوران پولیس کی فائرنگ سے خواتین سمیت 14 افراد جاں اور متعدد زخمی ہوئے تھے۔

کیس لاہورکی انسداد دہشت گردی عدالت میں زیرسماعت ہے ۔ عدالت کے حکم پراستغاثہ میں سے نوازشریف اورشہبازشریف سمیت سیاسی شخصیات کا نام خارج کردیا گیا تھا۔