فیس بک پیج سے منسلک ہوں

چین نے ” قطبی شاہراہ ریشم “کا تصور پیش کر دیا

اسلام آباد پالیٹکس مانیٹر :چین نے قطبی شاہراہ ریشم کا تصور پیش کر دیا۔جمعہ کو چینی صدر شی جن پھنگ کے بیلٹ اینڈ روڈ بین البرعظمی منصوبے کی وسعت کو قطب شمالی تک لے جانے کی اپنی پالیسی کا اعلان کیا ہے جس کو” پولر سلک روڈ“ کا نام دیاگیا ہے۔چین نے کہا ہے کہ شاہراہ ریشم کو عالمی حدت کے باعث قطب شمالی تک کھل جانے والے راستوں سے شپنگ روٹس سے تشکیل دیا جائے گا۔چین نے کہا کہ سوئز کینال کے بجائے شمالی سمندری راستوں سے جہازوں کی مسافت میں20 روز کی کمی آسکتی ہے۔چین آرکٹک ریاست نہیں ہے تاہم قطبی خطے میں اس کا کردار سرگرم ہے جس کی وجہ سے چین آرکٹک کونسل کا 2013ءسے مبصر چلا آرہا ہے۔چین کا اس خطے میں روس کے یمال مائع گیس منصوبے میں بڑا حصہ ہے جہاں سے مستقبل میں چین کو سالانہ 4 ملین ٹن ایل این جی سپلائی ہو گی۔جمعہ کو چین کی ریاستی کونسل انفارمیشن نے شمالی قطب کے حوالے سے امور پر چین کی پالیسی کے حوالے سے چینی حکومت کی طرف سے آرکٹک پالیسی پر پہلی مرتبہ وائٹ پیپر جاری کیا ہے۔

تبصرے