سپریم کورٹ :عتیقہ اوڈھو کی دو بوتل شراب کا فیصلہ نہ ہوسکا

اسلام آباد -( اللہ داد صدیقی ) سپریم کورٹ میں عتیقہ اوڈھو شراب برآمدگی کیس کی سماعت ،عدالت نے ہائی کورٹ اور ٹرائل کورٹ کے فیصلے کالعدم قرار دیدیئے۔ ٹرائل کورٹ کو بریت کی درخواست پر دوبارہ فیصلے کی ہدایت کردی-
عدالت نے ہدایت دی کہ ٹرائل کورٹ درخواست میں اٹھائے گئے تمام قانونی نکات پر واضح حکم دے
اداکارہ عتیقہ اوڈھو کے وکیل ارشد نذیر نے دوران سماعت عدالت کو بتایا کہ ایئرپورٹ لائونج سے شراب برآمد ہونے کا دعوی کیا گیا،قانون کے مطابق نشہ آور اشیاء عوامی مقامات پر نہیں رکھی جا سکتیں، ایئرپورٹ لائونج عوامی مقام میں نہیں آتا۔جسٹس منظور ملک نے کہا کہ وہ کیس پر کوئی تبصرہ نہیں کرنا چاہتے، کچھ کہہ دیا تو آپ کہیں گے عدالت اثرانداز ہوتی ہے، کسٹم کی وکیل نے فیصلے کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ایئرپورٹ لائونج بھی عوامی مقام میں ہی آتا ہے،ٹرائل کورٹ نے عتیقہ اوڈھو کی بریت کی درخواست خارج کر دی تھیہائی کورٹ نے ٹرائل کورٹ کا فیصلہ برقرار رکھا تھا-سماعت کورٹ روم نمبر 5 میں جسٹس منظور احمد ملک کی سربراہی میں قائم دو رکنی بینچ نے کی۔