حسین نواز پاناما جے آئی ٹی کو دستاویزات دینے سے گریزاں

اسلام آباد پالیٹکس رپورٹ: وزیراعظم کے صاحبزادے حسین نواز سمن میں ہدایت کے باوجود بغیر دستاویزات پاناما کیس جے آئی ٹی کی پیشی پر گئے۔ جے آئی ٹی سمن میں واضح ہے کہ پیشی کے وقت حسین نواز کو کون کون سی دستاویزات ساتھ لانی تھیں۔
حسین نواز نے 28 مئی کو فیڈرل جوڈیشل اکیڈمی میں مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کے سامنے پیش ہونے سے قبل دعویٰ کیا تھا کہ جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونے کا نوٹس 24 گھنٹے پہلے ملا۔ حسین نواز نے کسی بھی مفروضے پر بات کرنے سے گریزکرتے ہوئے واضح کیا تھا کہ انہیں کوئی سوالنامہ نہیں دیا نے ان

دستاویزی کے مطابق حسین نواز کا دعویٰ جھوٹ کا پلندہ نکلا۔حسین نواز کے بیان سے تین روز قبل 25 مئی کے سمن میں واضح ہے کہ آف شور کمپنیوں کے ڈائریکٹرز، شیئر ہولڈرز، بینک اسٹیٹمنٹنس سمیت تمام تفصیلات پر مبنی دستاویزات ہمراہ لائیں۔
یہی نہیں جے آئی ٹی نے حسین نواز کو ایرینا لمیٹڈ، ہل میٹلز اور عزیزیہ ملز کا ریکارڈ لانے کا بھی کہا گیا۔ سمن میں یہ ہدایت بھی ہے کہ اگر اور بھی کہیں سرمایہ کاری کر رکھی ہے تو اس کا بھی ریکارڈ لایا جائے۔