لاہور میں مردم شماری ٹیم پر خودکش حملہ ،6 شہید متعدد زخمی

اسلام آباد پالیٹکس رپورٹ: لاہورکے بیدیاں روڈ پر مردم شماری ٹیم پر خود کش حملے میں پاک فوج کے 4 جوانوں سمیت 6 افراد شہید اور متعدد زخمی ہو گئے۔
رپورٹس کے مطابق لاہور کے علاقے بیدیاں روڈ پر خود کش دھماکے سے کم از کم 6 افراد جاں بحق جب کہ 18 زخمی ہوئے۔ مردم شماری ٹیم کے اہلکار جن میں پاک فوج کے جوان اور محکمہ تعلیم کے اساتذہ شامل تھے اپنی ڈیوٹی سرانجام دینے کے لئے نکلنے لگے تو ایک خود کش بمبار نے خود کو ان کی گاڑی کے قریب دھماکے سے اڑا لیا۔
دھماکے میں پاک فوج کے 4 جوانوں سمیت 6 اہلکار شہید ہوئے، شہید ہونے والے دو اہلکاروں کا تعلق سندھ رجمنٹ جب کہ ایک کا 10 ویں ایل این سے تھا اور ان میں سے 3 کی اہلکاروں کی شناخت ریاض، ساجد اور عبداللہ کے ناموں سے ہوئی ہے۔ دھماکے کے بعد سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور تخریب کاروں کے سہولت کاروں کی گرفتاری کے لئے علاقے میں سرچ آپریشن شروع کردیا۔
ریسکیو ذرائع کا کہنا ہے کہ زخمیوں کو جنرل اسپتال اور سی ایم ایچ منتقل کیا گیا ہے جب کہ طبی ذرائع کا کہنا ہے کہ 4 افراد کی حالت تشویشناک ہے تاہم زخمیوں کو مکمل طبی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں۔ ایم ایس جنرل اسپتال کا کہنا ہے کہ 3 لاشیں اور 11 زخمیوں کو اسپتال لایا گیا جن میں سے 3 کی حالت تشویشناک ہے۔
کور کمانڈر لاہور لیفٹیننٹ جنرل صادق علی نے لاہور دھماکے میں زخمی ہونے والوں کی عیادت کی اور اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ مردم شماری ٹیم میں شامل پاک فوج کے جوانوں نے قوم کی خدمت میں شہادت کا رتبہ پایا ہے۔ کورکمانڈرلاہور کا مزید کہنا تھا کہ اس بزدلانہ کارروائی میں ملوث دہشت گرد سزا سے نہیں بچ پائیں گے اور دہشت گردوں کے خلاف آپریشن جاری رہے گا۔
بم ڈسپوزل اسکواڈ کا کہنا ہے کہ دھماکے میں 10 کلو گرام دھماکا خیز مواد استعمال کیا گیا جب کہ ذرائع کا کہنا ہے کہ خود کش حملہ آور کا سر مل چکا ہے جو شکل سے ازبک معلوم ہوتا ہے اور اس کی عمر 20 سے 25 سال ہے۔

دوسری جانب پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر باجوہ نے مردم شماری ہر صورت مکمل کرنے کے عزم کا اظہار کردیا۔پاک فوج کے محکمہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق آرمی چیف کا کہنا تھا کہ فوجی جوانوں اور مردم شماری عملے کی قربانی عظیم ہے۔جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا تھا کہ جوانوں نے فرائض کی ادائیگی کے دوران جام شہادت نوش کیا، مردم شماری قومی ذمہ داری ہے جو ہر صورت مکمل ہوگی۔