اقوام متحدہ: ڈرون حملوں پر پاکستان کی کوششوں سے قرارداد منظور

اسلام آباد پالیٹکس رپورٹ: اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے پہلی بار ڈرون حملوں پر تحفظات کا اظہارکرتے ہوئے قرارداد منظور کی ہے۔193 ممالک نے دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کے دوران انسانی حقوق اور عالمی قوانین کی پاسداری کے حوالے سے متفقہ قرار داد منظور کی جس میں ایک حصہ پاکستان کی کوششوں سے شامل کیا گیا جو ڈرون حملوں سے متعلق ہے۔
اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے متفقہ طور پر منظورقرار داد میں کہا گیا ہے کہ ڈرون طیاروں کے استعمال میں عالمی قوانین کو مدنظر رکھا جائے۔ قرارداد میں کہا گیا کہ ڈرون حملوں میں معصوم اور بے گناہ شہری نشانہ بنتے ہیں۔ ڈرون حملے دہشتگردی میں اضافے کا باعث ہیں لہذا عالمی برادری ڈرون حملوں سے متعلق قوانین پر نظر رکھے۔قرار داد میں کہا گیا کہ ڈرون حملوں سے دہشتگردی میں اضافہ ہوتا ہے۔ قرار داد میں کہا گیا کہ ڈرون حملوں پر اٹھنے والے قانونی سوالوں پر رکن ممالک میں اتفاق رائے پیدا کرنے کی ضرورت ہے،ڈرون استعمال کرنے والے ممالک کو حملوں میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر نظر رکھنے اور احتساب یقینی بنانے کیلئے آزادانہ واقعات کی تحقیقات کرنے پر بھی زور دیا گیا ہے۔ڈرون حملے کرنے والے عالمی قوانین اور انسانی حقوق کا خیال رکھیں،قرار داد میں ڈرون استعمال کرنے والے ممالک کو حملوں میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی پر نظر رکھنے اور احتساب یقینی بنانے کیلئے آزادانہ واقعات کی تحقیقات کرنے پر بھی زور دیا گیا ہے۔تاہم اس قرارداد میں نہ تو ڈرون حملوں کی مذمت کی گئی ہے اور نہ ہی کسی ملک کو ڈرون حملے بند کرنے کے لیے کہا گیا ہے ۔گزشتہ روز پاکستان نے ہم خیال ممالک کے تعاون سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں امریکی ڈرون حملوں کے خلاف قرارداد پیش کی تھی ۔