لیون پینیٹا نے ایبٹ آباد آپریشن کرنیوالے کمانڈروں کے نام افشا کیے

 اسلام آباد پالیٹکس رپورٹ: امریکی سی آئی اے کی منظرعام پر آنے والی نئی خفیہ دستاویزات کے مطابق ادارے کے سابق ڈائریکٹر لیون پینیٹا نے فلم ”زیرو ڈارک تھرٹی” کے مصنف مارک بوال کو پاکستان میں القاعدہ کے سربراہ اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے لیے خصوصی فورسز کی کارروائی کے بارے میں آگاہ کیا تھا۔

لیون پینیٹا نے ایبٹ آباد آپریشن کے بارے میں سی آئی اے کے ہیڈکوارٹرز میں ایک تقریر تھی اور اس موقع پر مارک برال موجود تھے جنھوں نے اس تقریر کے تمام اہم نکات نوٹ کر لیے تھے۔اب مسٹر پینیٹا نے اپنے ایک ترجمان کے ذریعے کہا ہے کہ وہ بوال کی کمرے میں موجودگی سے آگاہ نہیں تھے۔

امریکا کے ایک قدامت پسند گروپ جوڈیشل واچ نے سی آئی اے کی جانب سے منگل کو جاری کردہ 200 سے زیادہ صفحات کو محیط دستاویزات کے حصول کے لیے درخواست دائر کی ہے۔یہ دستاویزات بن لادن کی ہلاکت کے لیے شب خون کارروائی کے بارے میں فلم میں سی آئی اے کے کردار کی تحقیقات سے متعلق ہیں۔

سی آئی اے کے سابق ڈائریکٹر لیون پینیٹا نے اپنے ترجمان جرمی باش کے ذریعے ایک بیان میں کہا ہے کہ ”مجھے یہ کوئی آئیڈیا نہیں تھا کہ یہ شخص بھی سامعین میں موجود ہے۔آج بھی اگر وہ کمرے میں داخل ہوگا تو میں اس کو پہچان نہیں پاؤں گا۔میرا خیال تھا کہ ہر شخص کو مناسب کلیئرینس کے بعد ہی تقریر سننے کی اجازت دی گئی ہوگی”۔

سی آئی اے کی دستاویزات کے مطابق لیون پینیٹا نے اس تقریر میں پاکستان کے شہر ایبٹ آباد میں اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے لیے چھاپہ مار کارروائی میں حصہ لینے والے یونٹ کے کمانڈروں کے نام افشا کیے تھے۔

سی آئی اے کے ترجمان ڈین بائیڈ نے کہا ہے کہ ایجنسی نے اس واقعہ کے بعد سے انٹرٹینمنٹ صنعت سے روابط کے لیے اپنے طریق کار پر نظرثانی کی ہے اور اب اس انڈسٹری کی جانب سے آنے والی درخواستوں کا مکمل ریکارڈ رکھا جارہا ہے۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ اس سال کے آغاز میں اس صنعت سے روابط اور انٹرٹینمنٹ سے متعلق منصوبوں کے لیے مکمل رہ نما اصول جاری کیے گئے تھے تاکہ خفیہ مواد کے تحفظ کو یقینی بنایا جاسکے۔امریکی خبررساں ادارے  کی اطلاع کے مطابق مارک بوال نے اس رپورٹ پر کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کیا ہے۔